June 12, 2024

قرآن کریم > مريم >surah 19 ayat 10

قَالَ رَبِّ اجْعَل لِّي آيَةً قَالَ آيَتُكَ أَلاَّ تُكَلِّمَ النَّاسَ ثَلاثَ لَيَالٍ سَوِيًّا 

زکریا نے کہا : ’’ میرے پروردگا ! میرے لئے کوئی نشانی مقرر فرما دیجئے۔‘‘ فرمایا : ’’تمہاری نشانی یہ ہے کہ تم صحت مند ہونے کے باوجود تین رات تک لوگوں سے بات نہیں کر سکو گے۔‘‘

 آیت ۱۰:  قَالَ رَبِّ اجْعَلْ لِّیْٓ اٰیَۃً:    «عرض کیا: اے میرے پروردگار! میرے لیے کوئی نشانی مقرر فرمادے۔»

            قَالَ اٰیَتُکَ اَلَّا تُکَلِّمَ النَّاسَ ثَلٰثَ لَیَالٍ سَوِیًّا:    «فرمایا: تمہارے لیے نشانی یہ ہے کہ تم گفتگو نہیں کر سکو گے لوگوں سے تین راتیں متواتر۔»

            گویا بطور نشانی اللہ تعالیٰ نے تین دنوں تک حضرت زکریا کی قوتِ گویائی سلب کر لی۔ سوره آلِ عمران ( آیت: ۴۱) میں اس مضمو ن کو اس طرح بیان کیا گیا ہے:  قَالَ اٰیَتُکَ اَلاَّ تُکَلِّمَ النَّاسَ ثَلٰثَۃَ اَیَّامٍ اِلاَّ رَمْزًا:    یعنی آپ تین دن تک لوگوں سے گفتگو نہیں کر سکو گے مگر اشاروں کنایوں میں۔ 

UP
X
<>